Darbar-e-Dil…

ہم کہ دشتِ جہاں کو آباد کیے بیٹھے ہیں
آرزوئے یار کواب خاک کیے بیٹھے ہیں
خواب کے تار سے خواہش کو رفو کرتے
دامنِ دل کو اب چاک کیے بیٹھے ہیں
کاش وہ آئے جلائے یہاں کو ئی چراغ
دل کے دربار کو ہم طاق کیے بیٹھے ہیں۔
شاعرہ: عمیرہ احمد

 

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s